اہم خبریںبلڈانہ

حافظ بیٹے کا درندے باپ نے کیا مسجد میں قتل ؟؟؟ ؛ حریص باپ پر پیسوں کے لئے بیٹے کا گلا گھونٹ دینے کا شک

kawish e jameel reporter khamgaon dist buldhanaکھام گاؤں (واثق نوید):شیگاؤں شہر کی خواجہ غریب نواز مسجد کے اسٹور روم میں مسلم نوجوان حافظ قرآن کی مشکوک حالت میں نعش پائے جانے سے پورے شہر میں کھلبلی اور غم وغصہ کی لہر دوڑ گئی۔مرحوم کی ماں کی شکایت پر پولیس نے باپ کو گرفتار کرلیا۔ پوچھ تاچھ جاری ہے۔
ملی جانکاری کے مطابق شہر کے خمو جمعدار نگر کی خواجہ غریب نواز مسجد کے اسٹور میں صبح پانچ بجے کے قریب مؤذن سید ولی سید محبوب کو ایک نوجوان سویا ہوا دیکھائی دیا۔ جگانے کے لئے قریب جانے پر معلوم ہوا کہ نوجوان کی موت واقع ہوگئی۔ ابتدائی معلومات کے مطابق وائر سے نوجوان کا گلہ گھونٹ کر قتل کیا گیا۔ نوجوان کی شناخت محلے کے ہی ساکن حافظ قرآن محمد سلیم سیخ قاسم (19) کے طور پر ہوگئی۔ پولیس اور مرحوم کے گھر والوں کو اطلاع دی گئی۔ معلوم رہے کہ مرحوم کی والدہ شوہر کے ظلم و ستم اور جسمانی تشدد کی وجہ سے گزشتہ پندرہ دنوں سے اپنے میکے ماٹر گاؤں چلے گئی تھی ، اطلاع ملنے پر فورآ شیگاؤں پہونچیں جہاں پر انہوں نے پولیس اسٹیشن میں بیٹے کے قتل کا شک خود کے شوہر پر ظاہر کیا۔ ان کے کہنے کے مطابق شوہر نے سلیم کو کئی مرتبہ جان سے مارنے کی دھمکی دی تھی۔ بیوی کے بیان پر پولیس نے فرار باپ کو تلاش کرکے بالاپور سے گرفتار کرلیا، بیوی کی شکایت پر پولیس نے باپ کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کرکے تحقیقات شروع کردی ہے ۔ تھانیدار سنتوش ٹالے کی رہنمائی میں سب انسپکٹر نتین انگولے مزید تحقیقات کررہے ہے۔
دل دہلانے والی اس حادثہ کی ملی جانکاری کے مطابق خمو جمعدار نگر کے ساکن شیخ قاسم کے حافظ بیٹے نے امسال سیلانی میں ماہ رمضان میں اپنی خدمات انجام دیں، جس کا انہیں گاؤں والوں کی جانب سے معقول نذرانہ پیش کیا گیا۔ بے غیرت اور حریص باپ کی نظر بیٹے کے نذرانے پر تھی ۔ بار بار تین چار ہزار روپئے کے لئے بیٹے کو پریشان کرنے لگا ۔ جبکہ حافظ سلیم نے یہ پیسے اپنی بہین کی 17 مئی کو طے شادی کے لئے محفوظ رکھے تھے۔ بہین کی شادی کی تیاری کے لئے ہی حافظ سلیم 16 مئی کو ماٹر گاؤں سے شیگاؤں آئے تھے۔ ذرائع سے ملی جانکاری کے مطابق حریص باپ نے پھر پیسوں کی مانگ کی جس کی وجہ سے حافظ صاحب رات کو گھر سے مسجد میں سونے چلے گئے اور اپنے والدہ کو فون پرصبح آنے کی اطلاع کردی ،ایک اندازے لالچی و ظالم باپ نے معصوم حافظ بیٹے کا پیچھا کرتے ہوئے رات میں مسجد کے اسٹور روم میں بیٹے کو سوتے ہوئے پایا جہاں اس ظالم نے حافظ قرآن بیٹے کو کیبل وائر سے گلہ گھونٹ کر موت کی نیند سلا دیا۔ 17 مئی کی الصبح مؤذن کو اسٹور روم میں مشکوک حالت میں نعش دیکھائی دینے پر اس کی معلومات ہوئی۔ حافظ سلیم کی تدفین 17 مئی کو بعد نماز ظہر شیگاؤں مسلم قبرستان میں عمل میں آئی۔
حافظ بیٹے کا درندے باپ کے ذریعے مسجد میں قتل کرنے پر مسلم سماج میں خبیث باپ کے خلاف شدید غمِ و غضہ پایا جارہاہے
ظالم باپ کے ذریعے چند روپیوں کے لئے عید کے دوسرے دن نوجوان حافظ بیٹے کے قتل کی چاروں طرف مذمت کی جارہی ہے۔ عوام کا مطالبہ ہے کہ ایسے ظالم باپ کو جلد از جلد پھانسی کی سزادی جائے۔
ملزم شیخ قاسم ابھی پولیس کی حراست میں ہے پولیس باریک بینی سے اس قتل کے مقدمے کو حل کرنے کی کوشش کررہی ہے۔ جس سے جلد از جلد باپ کا پاپ عوام کے سامنے آئیں گا۔ سب کی نظریں پولیس تحقیقات پر لگی ہوئی
ہیں۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
error: انتباہ:مواد محفوظ ہے