عالمی خبریں

جاپان کے سابق وزیراعظم شنزو آبے کی ہوئی موت ؛ انتخابی مہم کے دوران لگی تھی گولی

جاپان کے سابق وزیر اعظم شنزو آبے انتخابی مہم کے دوران گولی لگنے سے ہلاک ہو گئے۔ , اس سے قبل جاپانی وزیر اعظم فومیو کشیدا نے دارالحکومت ٹوکیو میں بتایا تھا کہ سابق وزیر اعظم شنزو آبے کی حالت انتہائی تشویشناک ہے۔ شنزو ایبے کو گلے میں گولی لگی تھی اور کافی خون بہنے کے بعد ہسپتال میں انہیں بچانے کی کوششیں کی جا رہی تھیں۔ لیکن شنزو آبے کے بچنے کے امکان بہت کم تھے. Fumio Kishida نے کہا کہ میری دعا ہے کہ شنزو آبے کی جان بچ جائے۔shinzo abe


خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق جاپان کے سرکاری چینلز این ایچ کے اور جی جی (جی جی نیوز ایجنسی) نے سابق وزیراعظم شنزو آبے کی موت کی تصدیق کی ہے۔ جاپان کی لبرل ڈیموکریٹک پارٹی کے ایک سینئر عہدیدار کے مطابق، سابق وزیر اعظم شنزو آبے کی موت نارا کے علاقے کاشیہارا شہر میں ہوا۔ یہاں 67 سالہ لیڈر کو بچانے کی کوشش کی جا رہی تھی۔
جاپانی سیاست پر نظر رکھنے والے کاناگاوا یونیورسٹی کے پروفیسر کوری والیس نے پہلے بتایا تھا کہ جاپان کی سیاست میں پچھلے 50-60 سالوں میں ایسا نہیں ہوا۔ آخری بار ایسا واقعہ 1960 میں پیش آیا تھا جب جاپان سوشلسٹ پارٹی کے انجیرو اسانوما کو دائیں بازو کے نوجوان نے چھرا گھونپ دیا تھا۔ لیکن اب جاپان میں انتخابی مہم عوام کے قریب جا کر ہی کی جاتی ہے۔
حکومتی ترجمان ہیروکازو ماتسونو نے قبل ازیں رپورٹوں کو بتایا تھا کہ "شینزو آبے پر حملہ ملک کے مغربی علاقے نارا میں دوپہر 12 بجے سے کچھ دیر پہلے ہوا، اور ایک شخص کو گرفتار کر لیا گیا ہے جسے گولی مارنے والا سمجھا جاتا ہے۔”
67 سالہ ایبے سکیورٹی فورسز کی موجودگی میں تقریر کر رہے تھے لیکن حاضرین آسانی سے ان تک پہنچ سکتے تھے۔ جاپان کے سرکاری ٹی وی NHK کی طرف سے نشر کی گئی فوٹیج میں اسے اسٹیج پر کھڑا ہوا میں ایک زوردار دھماکے اور دھواں کے طور پر دیکھا جا سکتا ہے۔

(بشکریہ این ڈی ٹی وی)

kawishejameel

Jameel Ahmed Shaikh Chief Editor: Kawish e Jameel (Maharashtra Government Accredited Journalist) Mob: 9028282166,9028982166

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
error: Content is protected !!
%d bloggers like this: