اہم خبریں

گذشتہ ماہ ہوئے ناسک ضلع کے یولہ میں افغانی صوفی کے قتل معاملے میں پولیس کو ملی کامیابی ؛ تین ملزمان کی ہوئی گرفتاری، ملزمان سے اسلحہ برآمد

احمد نگر: (کاوش جمیل نیوز) : راہوری پولیس نے گزشتہ ماہ یولہ تعلقہ میں ایک افغانی صوفی کے قتل کے سلسلے میں تین ملزمان کو گرفتار کیا ہے۔ ملزمان سے دو دیہاتی چاقو اور پانچ کارتوس برآمد ہوئے ہیں۔ ملزمین کی شناخت سنتوش ہری بھاؤ برہانے (27 سمتا نگر ضلع کوپرگاؤں ضلع احمد نگر)، گوپال نمبا بورگولے (26 چاوڑی مالیگاؤں) اور وشال سدانند پنگلے (23 بیل بازار روڈ، کوپرگاؤں) کے طور پرہوئی ہے۔ پولیس نے ملزمان کو راہوری تعلقہ کے ایک ہوٹل سے گرفتار کیا ہے۔ پولیس گزشتہ ایک ماہ سے ملزمان کی تلاش میں تھی۔afghani sofi murder aaropi


ایک افغانی صوفی کو 5 جولائی کی رات 8 بجے کے قریب یولہ تعلقہ کے منصوبہ بند چیچونڈی MIDC علاقے میں گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا تھا۔ مقتول صوفی کا نام صوفی خواجہ سید غریب چشتی ہے۔ واقعہ کے بعد چار نامعلوم ملزمان موقع سے فرار ہوگئے تھے۔ پولیس نے چند گھنٹوں میں کیس کریک کر کے قتل کا معمہ حل کر لیا۔ لیکن ملزم مفرور تھا۔ ناسک کے پولیس سپرنٹنڈنٹ سچن پاٹل نے بتایا کہ قتل جائیداد کے تنازعہ کی وجہ سے ہوا ہے۔
ناسک کے سپرنٹنڈنٹ آف پولیس سچن پاٹل نے چونکا دینے والی معلومات دی تھی کہ مذکورہ افغان صوفی کو ان کے ڈرائیور نے قتل کیا۔ سر میں گولی لگنے سے صوفی جاں بحق ہوا۔ جائے وقوع پر پولیس کو ایک پلاٹ پر ناریل توڑے ہوئے، اگربتیاں جلی ہوئی اور کُم کُم کی ڈبی ملی تھی۔ پولیس نے مقتول صوفی کے دوست غفار اور دوسرے کو حراست میں لے کر تفتیش شروع کر دی تھی۔ صوفی خواجہ سید غریب چشتی کا تعلق افغانستان سے تھا۔ وہ ناسک ضلع کے واوی گاؤں میں ایک مقیم تھا۔ اس کی میعاد اس سال کے آخر میں ختم ہونے والی تھی۔ اس نے واوی کے علاقے میں 5 ایکڑ زمین کسی اور (اپنے منیجر) کے نام کر رکھی تھی۔ اس کی کچھ اور جائیدادیں بھی ہیں۔ وہ خود کو مسلمان علماء کا اوتار کہتے تھا۔ کہا جاتا ہے کہ ملک اور بیرون ملک اس کے پیروکار ہیں۔

kawishejameel

Jameel Ahmed Shaikh Chief Editor: Kawish e Jameel (Maharashtra Government Accredited Journalist) Mob: 9028282166,9028982166

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
error: Content is protected !!
%d bloggers like this: