شعروشاعری

” غزل“

منظورندیم (آکولہ)
9372501237

وہ چُھپ کےاپنی انا کاٹنے میں ماہر ہے .
ہمارا جج تو لِکھا کاٹنے میں ماہر ہے !!
سُناٶ فیصلے جاناں سدا ہمارے خلاف
ہمارا دل بھی سزا کاٹنے میں ماہر ہے۔
چناٶ رُت میں نظر آٸے بھوکےننگوں کو
جو ، اُن کی آہ و بکا کاٹنے میں ماہر ہے۔
”غُرور“ سےبچو، تم پر جو ہے گُلوں کا نُزول
” یہ ساتھ رہ کے گلہ کاٹنے میں ماہر ہے۔“
جو اِس فقیر پہ ماٸل امیرِ شہر بہت !!
ضرور حق کی صدا کا ٹنے میں ماہر ہے۔
لگاٶ لاکھ اخوّت کے تم درخت یہاں
تمہارا راہ نما کاٹنے میں ماہر ہے
وہ تیز دھار سےتفتیشی محکموں کی ندیم
مخالفت کی ہوا کاٹنے میں ماہر ہے ۔

kawishejameel

Jameel Ahmed Shaikh Chief Editor: Kawish e Jameel (Maharashtra Government Accredited Journalist) Mob: 9028282166,9028982166

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں
Close
Back to top button
error: Content is protected !!
%d bloggers like this: